شہ سرخیاں

مکتب تشیع کے علما پر مشتمل ایک نئی جماعت کی تشکیل کر دی

ملتان()مجلس وحدت مسلمین پاکستان نے مجلس علما شیعہ پاکستان کے نام سے مکتب تشیع کے علما پر مشتمل ایک نئی جماعت کی تشکیل کر دی ہے ۔جس کے پہلے اجلاس میں ملک بھر سے سینکڑوں علما شریک ہوئے۔ مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے اجلاس کی صدارت کی جس میں وطن عزیز کی سالمیت و استحکام اور قومی سلامتی جیسے امور کو یقینی بنانے کے لیے اجلاس میں پندرہ نکات پر مشتمل ایک قرار داد پیش کی گئی جسے اکثریت رائے سے منظور کیا گیا ہے۔ قرار داد میں ملک کی موجودہ صورتحال پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے آئیڈیالوجی اور مسلک کے نام پر تکفریت کے پرچار کو پاکستان کی سلامتی اور فیڈریشن کے لئے زہر قاتل قرار دیا گیااورتکفیریت کے فروغ میں ملوث ان تمام افراد ، اداروں اور مدارس کے خلاف آپریشن ردالفساد کے تحت بھر پور کاروائی کا مطالبہ کیا گیا۔ اس سلسلے میں رینجرز اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کو پورے ملک میں مکمل اختیارات کے ساتھ کاروائی کا حکم دینے کا بھی مطالبہ کیا گیا۔ قرار داد میں کہا گیا کہ مجلس علما شیعہ پاکستان ملک میں جاری ردالفساد آپریشن کی حمایت کرتی ہے۔ دہشت گردوں کے علمی ،نظریاتی اور صحافتی سہولت کاروں کو بھی ردا لفساد کے تحت قانون کے شکنجے میں لایا جائے ۔ وطن عزیز میں وحدت بین المسلمین کی مکمل حمایت اور اس ہدف کے حصول کے لئے ہر طرح سے کوششیں جاری رکھی جائیں گی۔مجلس علماِ شیعہ پاکستان وحدت بین المومنین کو ایک بنیادی اصول قرار دیتے ہوئے باہمی وحدت کے لیے بھرپور تگ و دوکرے گی۔ عسکری اتحاد کے نام پر پاکستان کو عالمی سازش کا شکار کرنے کی کوشش قابل مذمت ہے ۔مسلم ممالک کے تنازعات میں غیر جانب دار رہ کر ثالثی کے کردار کی ہماری طرف سے حمایت ہو گی۔قرار داد میں کہا گیا کہ مجلس علما شیعہ پاکستان وطن عزیز کی نظریاتی ،فکری اور ثقافتی سرحدوں کے دفاع کے لئے ہر سطح پر اپنی کوششیں جاری رکھے گی۔ مجلس علما شیعہ پاکستان علما کرام مولانا عقیل خان، مولانا ظہیر الدین بابر اوردیگر شخصیات سمیت تمام بے گناہ اسیروں کی فوری رہائی اور سعودی ایما پر مکتب اہل بیت کے پیروکاروں کے خلاف ناروا سلوک بند کرنے کا مطالبہ کرتی ہے اور ماوراِ عدالت اغواکی پرزور مذمت کرتی ہے۔ وزارت مذہبی امور سے مطالبہ کیا گیا کہ بین المذہبی و بین المسلک ہم آہنگی کیلئے قومی کانفرنس بلائی جائے اور سرکاری سطح پر داعش کی فکرسے ا ظہار بیزاری کیا جائے اور داعش سے کسی بھی طرح کی قربت رکھنے والوں کے خلاف سخت کروائی کی جائے۔ نیشنل ایکشن پلان اور آپریشن ردالفساد کے تحت کالعدم جماعتوں کو مختلف ناموں سے کام کرنے سے روکا جائے علاوہ از یں سابقہ آپریشنز کی کامیابیوں اور ناکامیوں اور اس کی وجوہات کو بیان کیا جائے۔ مختلف عدالتی کمیشنز کی رپورٹ کو عوامی مفاد کیلئے جاری کیا جائے۔مجلس علما شیعہ پاکستان یمن میں سعودی جارحیت اور اس کے نتیجے میں حالیہ انسانی بحران کی بھر پور مذمت کرتی ہے اور امت مسلمہ سے مطالبہ کرتی ہے کہ وہ مسلم ممالک پر حملے کی مذمت کریں۔مجلس علماِ شیعہ پاکستان شام میں کیفریہ ،فوریاکے عوام پر دہشت گردانہ حملوں اور شامی ایئر بیس پر امریکی حملے کی بھر پور مذمت کرتی ہے۔مجلس علما شیعہ پاکستان رسول اکرم(ص)کی حرمت کو ہر چیز سے افضل گردانتی ہے۔ لیکن کسی کو اس بات کی اجازت نہیں ہونی چاہئے کہ وہ قانون کو ہاتھ میں لے کربیگناہ لوگوں کا قتل عام کرے۔ قانون توہین رسالت کا غلط استعمال بند ہونا چاہئے۔مجلس علما شیعہ پاکستان ولی خان یونیورسٹی میں مشال خان کے بے رحمانہ قتل کی مذمت کرتی ہے۔ کسی کو توہین رسالت کے نام پر حضرت رسول اکرم (ص)کے ماننے والوں کے قتل کی اجازت نہیں ہونی چاہیے۔

Share this

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Powered by Dragonballsuper Youtube Download animeshow